Rehman Malik Blocked Cellular Services for His Own Business Interests: Taliban Spokesperson

اسے اردو میں پڑھیے

rehman-malikPakistani Taliban have accused Rehman Malik, Ministr Interior, for blocking cellular services in the country for his own personal businesses interest.

This was stated by a Pakistani Taliban Spokesperson during an interview with Dawn.com, while explaining that group does not carry out bombings using cellular phones as detonators.

Dawn.com further mentions that Pakistani Taliban reaffirmed that they will continue their activities even during the blockade of cellular services.

However, Pakistani authorities say that militants often detonate bombs using cell phones, with Interior Minister Rehman Malik claiming that 90 per cent of the bombs set off by militants in Pakistan have been detonated using mobile phones.

Amid security threats, cellular services in 50 major cities of Pakistan were suspended for 48 hours (except for 12 AM to 6 AM) on 9th and 10th of Muharram.

It merits mentioning here that two bombs were detonated in DI Khan, on 9th and 10th of Muharram killing 13 people in total despite blocked of cellular services in the city. Tehrik-i-Taliban Pakistan (TTP) had claimed responsibility for blast on 9th Muharram.


  • Well as per TV channels, netwoks were not blocked in dI khan. So the strategy did work as there were no other attacks anywhere in the country.

    • ali

      jee nahi. service was blocked in the city and at the location of blast. however the service was open in city outskirts only

      • as rehman malik said…. 90% attacks involved mobile phones….. it means not all attacks involved mobile phones…

  • Kia Aisa Mumkin Nahi.k Rehman malik Jagga Tax Mang raha ho Telecom Network se. Q k jitne Ziada rumors chal rahe hain telecom sector main un se to aisa he lagta hai…. Frequent Network shutdowns, MNP Banned… prepaid SIMS banned… rude strategies against Telcos…. I think so. Lakin Rehman Malik is especially belonging to FIA as per his background.. To phir aisa kuch bhi mumkin ho sakta hai… ??!!!!

    • but still we cannot believe on taliban statement….. we can hate rehman malik but he is certainly better than talibans……. simply no to talibans

  • Muhammad Anas Zafar

    Does banning cellular services stop suicide attacks?

    • DJ

      well tough i am totally against Rehman malik`s policy to block cellular networks but we all have to agree that policy did work as in two days (9,10 Muharram) no attack reported. i don’t know this was due to Cellular networks blockage or some other reasons but i think if this practice will continue we people will soon going to encourage this :(

      • Muhammad Anas Zafar

        But my question is that if there is a bomb blast (suicide or planted) despite cellular shutdown then what is the next thing left for ban?? Wearing Jackets???

        • Anas… i know u guys are frustrated with mobile services blockage. but this is a fact that previously talibans and other terrorists groups have mostly used mobiles phones for their activities… it was a wise decision to block services for 2 days to keep most of people save in current available resources and situation. great job done by rehman malik and he deserved appreciation for all of this. now its been done and now rehman malik should buy some equipment to not let taliban and other terrorists groups do attacks and not to block mobile services and motorbikes every time there is threat. Here we also need to realize the fact that we cannot agree and support taliban.. whatever they say doesn’t make any sense and we shouldn’t listen to their lies….

          • Muhammad Anas Zafar

            You’re right this was a wise decision but my question stands there. What are the use of Intelligence, Police, Rangers, F.C, and several other law enforcement agencies if only banning celluler service can stop bomb blasts then why are we wasting our money on the above mentioned resources?????????

  • Asad

    And I am sure majority of us will prefer to believe in Talibans statement despite the fact that what they have done to our country in the last decade. We are literally living in hell due to these blood thirsty bats. They have bombed our mosques, schools of kids, any political, religious or social gatherings, shrines & we are dumb enough to believe in every s**t they say. Follow their claims & allegations religiously…. Indeed INDEED We deserve to be slaughtered by those butchers!!!!!!!!!!

  • njm

    Believe me or not in Pakistan everything is possible.

    They easily manipulate things in their own favor, blaming attacks for mobile, and blocking mobile service in whole.

    Blocking pillion riding, and than trying to block whole motorbike riding as it fears attack.

    coming up next: citizens are not allowed to walk or come out of their homes as it fears someone will carry bomb along with them :|

    if somebody doesn’t know the height of frustration, perhaps that’s the right time to find it out.

  • Shahid Saleem

    What do you think? Does TTP get money from telecom companies in rural areas, for “protection”?

  • fksysko

    Seems like a war between Rehman Maik/Taliban and whole nation is suffering.

  • if the taliban statement right media already opened the scandal of any rehmen malik interest but i think taliban found themselves stagnant so that is why they given this kind of statement

  • Adv.Siddiqui

    Can any one confirm. I have heard Rehman malik own a busniess of call cards in UK . cards spceally made to place a call very low cost call to Pakistan????

  • Asad

    This is good….. If you don’t agree with the mindset of admin, your comment won’t get approved. Nice….

  • Ahmad Nawaz

    This Mad Man blocked cellular services in the name of So called
    ” National Security/ Interests” the objective behind is just personal interest.
    Which every body knows very well

  • Kiren Ahmed

    اسلام علیکم۔

    أپ سے گزارش عرض ھے اس ای میل کو ایک بار ضرور پڑھیے گا۔ کیونکہ یہ 25 لاکھ
    لوگوں اور خاندانوں کی ذندگی اور موت کا مسعلہ ھے۔ جیسا کہ اپ جانتے ھیں رحمان ملک
    صاحب نےموبائل کنیکشن کی فروخت پر پابندی لگادی ھے جس سے 25 لاکہ لوگوں کا اور 25
    لاکھ خاندانوں کا زریع معاش وابستہ تھا۔ہر پیشہ میں اچھے برے لوگ ھے اس پیشہ میں
    بھی تھے مگر چند سو لوگوں کی وجہ سے لاکھوں لوگوں سے انکا کاروبار چھین لیا جاے یہ
    کہاں کا انصاف ھے ؟

    سرکاری ملازمین کرپشن رشوت ستانی کرتے ہیں تو کیا وہ سرکاری ادارہ بند کردینا
    چاہیے؟

    موبایل سمز غلط ناموں پر کیسے ایکٹیو کی جاتی ہیں۔

    موبائل کمپنی کنیکشن سیلز کا ٹارگٹ دیتی ہیں ہر ماہ فرنچایز کو 3 سے 4 ہزار
    کنیکشن ۔ اور دھمکاتی بھی ھیں کہ اگر ٹارگٹ پورا نہ کیا تو کمیشن نہ ملے گا۔لیگل
    کرو یا ان لیگل سیلز لاو۔ فرنچایز کے پاس عوام اور اپنے تمام کسٹمرز کے شناختی
    کارڈ ہوتے ہیں۔

    سمز ایکٹیو کرنے کے لیے پوچھے جانے والے خفیہ سوال انکے جواب صرف کمپنی اور
    کمپنی کے ملازمین کو پتہ ھوتے ہیں سسٹم کی کمزوریاں بھی۔ کچھ موبائل شاپس کمپنی
    ملازمین کی یا انکی پارٹنر شپ میں ہوتی ھیں جہاں سے یہ ایکٹیو سمز فروخت کی جاتی
    ہیں ۔فرنچایز سے اس لیے فروخت نہیں کرتے کہ پی ٹی اے کا ڈر ہوتا ہے۔ تو قربانی کا
    بکرا اور بدنامی کا بکرا موبایل شاپ بن جاتی ہے دولت مند کرپشن کرکے اپنے تعلقات
    اور پیسہ کی وجہ سے بچ جاتا ہے۔ اور پھنستا غریب دکاندار اور کمپنی ملازم ھے جو
    اپنی نوکری یا دکان بچانے کے لیے کمپنیز کی بلیک میلنگ کا شکار ہوجاتا ہے۔اب بھی
    یہ ہوا کہ گورنمیٹ اور پی ٹی اے نے کمپنی اور فرنچایز کو تحفظ فراہم کردیا۔اور 25
    لاکھ دکانداروں کو بےروزگارکردیا۔موبیل شاپس پر رکھا کروڑوں روپے کی سمز نہ کمپنی
    واپس لینے کو تیار ہے نہ بیچنہ دینے کو۔ رحمان ملک صاحب دکانداروں کا مال کمپنی کو
    واپس لینے کے لیے بھی کوئی حکم جاری فرمایں کٰہ بےروزگار کرنےکا
    حکم تو بہت جلدی جاری کردیا تھا۔

    جو سم موبائل شاپ سے 70 روپے کی مل جاتی تھی اب
    وہ 500 اور اس سے زیادہ کی فرنچائز سے مل
    رہی ہے جبکہ کمپنی سے وہ سم 60 روپے کی فرنچائز کو ملتی ہے۔کہیں اس پالیسی کا مقصد
    صرف کپمنی اور فرنچایز کو فایدہ اور عوام کو لوٹنا تو نہیں ؟ زرا سوچئے

    جس ملک کا قانون صرف طاقتور اور پیسے والو کو
    تحفظ فراہم کرتا اور کمزوروں کےفورا خلاف حرکت میں اجاتا ہو۔وہاں کل بھی اج بھی
    اور أئندھ بھی طاقتور لوگ ان ضمیر فروش فرنچایز اور کمپنی ملازمین سے بنا نام کی
    سمز حاصل کرتے رہیں گے۔ اور کچھ زہین لوگ کبھی موبئل شاپس بند کرنے کے حکم کبھی
    عوام کو بند کرنے کے حکم جاری کرتے رہیں گے۔ھمارے خیال سے موبئل فون پولیس کے لیے
    مخبر کا کام کرتا ہے۔جسکہ زریع ان کی أپس کی بات چیت ان کی پلاننگ پتہ چلتی ھے۔ ان
    کو پکڑنے کے لیے وہ طریقہ اپنائے جائیں جو ساری دنیا میں رائج ہیں۔ سم
    لوکیٹر،موبائیل لوکیٹر۔ اگر تخریب کار موبائل کی جگہ انٹرنیٹ سروسس سے کالنگ کریں
    تو انکا پکڑنا اور مشکل ہوگا۔ کہ غیرملکی ویب سئٹس انکو معلومات شائد ہی فراھم
    کریں۔

    موبائل سگنلز بند کرنے سے فی الحال تو فایدہ ہو
    رہا ھے مگر تخریب کار وائرلیس واکی ٹاکی یا دوسرے ٹیکنالوجی استعمال کرنا شروع
    کریں گے، بم بنانے کے طریقے انٹرنیٹ پر دستیاب ہیں۔بم بنانے کا سامان بھی دکانوں
    پر دستیاب ہے غیرقانونی اسلحہ بھی بااسانی دستیاب ہے مگر ساری توجہ موبائل سمز پر
    مرکوز۔ کیونکہ اسلحہ کہ تاجروں اور موت کے سوداگروں کے حمایتی لوگ حکومتیں بنا اور
    گرا سکتے ہیں۔ رشوت اور سفارش پر بننے والے سرکاری ملازم میرٹ پر بننے والے تخریب
    کار کا مقابلہ کیسے کر سکتے ہیں؟

    رحمان
    ملک صاحب کا تعلق سیکورٹی اداروں کے ساتھ ہوتاہے۔ سیکورٹی اداروں کو اس بات سے
    کوئی دلچسپی نہیں کہ پیپلزپارٹی کا ووٹ بنک کم ہو یا زیادہ اس اقدام سے 25 لاکھ
    خاندان فی خاندان 5 افراد بھی ہو تو 1کروڑ 25 لاکھ افراد اس فیصلہ سے متاثر ہوں گے
    کیا الیکشن سے پہلے 1کروڑ 25 لاکھ لوگوں کو گورنمنٹ سے بدظن کرنا کیا یہ فیصلہ
    رحمان ملک صاحب کا صحیح ہے؟

    اگر أج
    کوئی بھی سیاسی جماعت ان 25 لاکھ خاندانوں کے لیے أواز اٹھاے گا تو ان 1 کروڑ 25
    لاکھ لوگوں کی دعا اور انکا ووٹ اس جماعت کے لیے ہی ھوگا۔

    میری نظر
    میں ایک تجویز ہے جس سے یہ تمام لوگ بھی بےروزگاری سے بچ سکتے ہیں اور سمز
    ایکٹیویشن کا نظام بھی غلطیوں سے پاک ہوسکتا ہے۔اگر حکومت تمام موبائل شاپس کو سم
    ان ایکٹیو سمز کمپنی پیک شدہ سیل کرنے کی اجازت دے دے۔ کیونکہ ان ایکٹیو سم کسی
    بھی استمعال میں نہیں اسکتی نہ کال کی جاسکتی ہے نہ اسکتی ہے نہ مسیج وہ ایک ڈیڈ
    کنکشن ہوتی ہے۔ کسٹمر کسی بھی موبائل شاپ سے اپنی پسند کا نمبر خریدے پھر اس کنکشن
    کو ایکٹیو کرانے کے لیے قریبئ نادرا أفس یا موبایل فرنچایز جا کر بایومیٹرک سسٹم
    میں اپنی تمام معلومات فراہم کر کے کنکشن کارأمد ایکٹیو کرالے۔ اس طرح اگر کوی غلط
    ایکٹیویشن ھوگی بھی تو وہ صرف نادرا أفس والا یا فرنچایز والا کر سکے گا دکاندار
    نہیں۔ ہم شرطیہ کہتے ہیں اس سے غلط ایکٹیویشن ختم ہوجایں گی۔

    امید ہے
    أپ ہمارے لیے کوشش کریں گے۔

    کیونکہ
    ہم یہ ای میل صرف ان افراد اور اداروں کو کر رہے ہیں جن سے ہمیں بہت امیدیں وابستہ
    ہیں۔اگر أپ کے بس میں کچھ نہیں پھر بھی أپ اس ای میل کو دوسروں کو فارورڈ کرکے
    ھماری مدد کر سکتے ہیں۔شاید أپ کی زرا سی کوشش سے
    25 لاکھ گھروں کا چولہا بجھنےسے بچ جاے۔

    شکریہ

    سجاد شاہ,,,,,,.