Image Image Image Image Image Image Image Image Image Image
Scroll to top

Top

گزشتہ سہ ماہی میں 31.2 ملین آئی فونز کی فروخت، ایپل کو 35.5 بلین ڈالرز کی آمدنی

Apple-Campus

ایپل نے اپنی گزشتہ سہ ماہی کی آمدنی کا اعلان کر دیا ہے۔ سلیکون ویلی کے اس عظیم ادارے نے توقع سے کچھ بڑھ کر یعنی 35.3 بلین ڈالرز کی آمدنی اور 6.9 بلین ڈالرز کے منافع کی خبر سنائی ہے۔

سیلز کے معاملے میں آئی فون 5 کمپنی کی فروخت ہونے والی اشیاء میں سب سے آگے ہے جس کے 31.2 ملین یونٹس فروخت ہوئے جو گزشتہ سال کے اسی عرصے میں 26 ملین تھے۔ آئی فون 5 اور 4 بدستور مشہور ترین ماڈلز ہیں، جس میں آخر الذکر 3جی ایس کی اسی عرصے میں حاصل کردہ شہرت سے ہیں آگے ہے۔ نتیجہ اوسط قیمت فروخت میں کمی ہے جو تقریباً 580 ڈالرز ہے۔

آئی پیڈ اور میک کی فروخت اتنی اچھی نہیں رہی کیونکہ دونوں کو صارفین کی دلچسپی اور فروخت میں کمی کا سامنا رہا۔ آئی پیڈ کی فروخت 17 سے 14.6 ملین تک پہنچ گئی جبکہ میک کی فروخت کم ہو کر3.8 ملین تک آ گئی۔

آئی پوڈ کا رحجان بدستور نیچے کی جانب ہے اور اس میں (سال بہ سال میں) 32 فیصد کی واضح کمی دیکھنے میں آئی ہے جو اب 4.57 ملین یونٹ ہے۔

مجموعی طور پر ایپل کے لیے آمدنی رپورٹ اچھی رہی جس نےحال ہی میں آمدنی کے اہداف حاصل نہیں کیے تھے۔ ایپل نے فروخت کے ساتھ چند اہم اعلان بھی کیے ہیں:

  • آئی پیڈ اس وقت ٹیبلٹ ویب براؤزر کا 84 فیصد حصہ رکھتا ہے (اس موقع پر ٹم کک نے مذاقاً کہا کہ سمجھ نہیں آتی کہ دیگر ٹیبلٹ آخرکس کام میں آ رہے ہیں)
  • آئی فون امریکہ اور دیگر چند کلیدی مارکیٹوں میں سب سے مشہور اسمارٹ فون رہا
  • میک او ایس ایکس کا جدید ترین ورژن میورکس اس سال موسم خزاں میں دستیاب ہوگا
  • آئی پیڈ کی اوسط قیمت فروخت گر کر 436 ڈالرز تک پہنچ گئی
  • فی حصص منافع کی شرح 7.47 ڈالرز رہی
  • ادارے کے پاس 146.6 ارب ڈالرز نقد کی صورت میں موجود ہیں

مزید پڑھنے کے لیے: ورج، این گیجٹ