Image Image Image Image Image Image Image Image Image Image
Scroll to top

Top

اتصالات نے وارد کی خریداری میں دلچسپی کی تصدیق کردی

Warid-Logo

اتصالات نے آج تصدیق کی ہے کہ گروپ کا پاکستانی حصہ پی ٹی سی ایل وارد ٹیلی کام پاکستان خریدنے میں دلچسپی رکھتا ہے۔

کافی عرصے سے یہ افواہیں گردش میں تھیں کہ پی ٹی سی ایل وارد ٹیلی کام خریدنے میں دلچسپی رکھتا ہے، جس کی تصدیق ذرائع ابلاغ کے لیے جاری کیے گئے اتصالات کے آج کے بیان سے ہو گئی۔

بحرینی اخبار ٹریڈ عربیہ نے بتایا ہے کہ اتصالات نے تصدیق کی ہے کہ اس کی ملحقہ پاکستان ٹیلی کمیونی کیشن کمپنی (پی ٹی سی ایل) نے موبائل آپریٹر وارد ٹیلی کام کو خریدنے میں دلچسپی ظاہر کی ہے۔

گزشتہ ماہ ذرائع ابلاغ میں سامنے آنے والی خبروں نے بتایا تھا کہ پی ٹی سی ایل وارد ٹیلی کام کے ساتھ سنجیدہ مذاکرات میں شامل ہے جو ممکنہ طور پر تقریباً 1 ارب ڈالرز کی قیمت میں وارد خریدنے کے حوالے سے ہے۔ بعد ازاں یہ انکشاف ہوا کہ اتصالات نے اس حصول کے حوالے سے مشاورت کے لیے گولڈمین ساکس سے رابطہ کیا ہے۔

پی ٹی سی ایل نے اس حصول کے حوالے سے پہلا اشارہ 2009ء میں دیا تھا۔ صدر اور سی ای او پی ٹی سی ایل ولید ارشائید بھی بسا اوقات اس کا ذکر کر چکے ہیں اور کافی عرصے سے وارد خریدنے میں دلچسپی لیتے دکھائی دیتے تھے۔

وارد جو خبروں کے مطابق 2011ء کے دوران پی ٹی سی ایل کے ساتھ فروخت کے حوالے سے گفتگو کر چکا ہے، لیکن کامیابی نہ ہونے کے بعد اس نے باضابطہ اعلان کیا تھا کہ وہ انضمام یا فروخت کی جانب قدم نہیں بڑھائے گا۔

وارد نے اپنی مارکیٹ پوزیشن کو بہتر بنانے کے لیے وقت لیا اور اب ایک مرتبہ پھر انضمام یا حصول کے لیے مذاکرات کر رہا ہے۔

ذرائع پر یقین کیا جائے تو دبئی اور ابوظہبی ان دنوں معاہدے کو حتمی شکل دینے کے لیے متعدد اجلاسوں کی میزبانی کر رہے ہیں گو کہ نتیجے کے لیے ہمارے پاس کوئی اوقات کار نہیں ہے، لیکن ایسا ظاہر ہوتا ہے کہ اس حوالے سے اگلا مہینہ بدستور اہم ہوگا۔ ایسا لگتا ہے کہ فروخت کیے جانے یا نہ کیے جانے بارے میں کوئی بھی فیصلہ اگلے 45 دنوں میں سامنے آ جائے گا۔

وارد ٹیلی کام متحدہ عرب امارات کے ظہبی گروپ کی مکمل ملکیت ہے۔

Next Story

This is the most recent story.